0

نظر بد کا روحانی علاج

نظر بد

بسم اللہ الرحمن الرحیم ۔
آج ہم بات کریں گے نظر بد کے بارے میں ہمارے پیارے نبی حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا               بے شک نظر بد برحق ہے اور یہ لگ جاتی ہے۔ اگر کسی انسان کو نظر بد لگ جائے اور وہ انسان نظر بد کا شکار ہوجائے تو انسان دن بدن کمزور ہونا شروع ہو جاتا ہے ہے اس کی روحانیت ختم ہونا شروع ہوجاتی ہے ہے وہ بیمار ہونا شروع ہو جاتا ہے۔ اگر یہ نظربد کسی بچے کو لگ جائے اور اب بچہ اس کا شکار ہو جائے تو وہ رونا شروع کر دیتا ہے۔ بچے کی طبیعت خراب ہونا شروع ہوجاتی ہے ہے کبھی بچہ روتا ہے تو کبھی ہنستا ہے ۔کچھ سمجھ نہیں آتا کہ بچے کو کیا ہوگیا ہے نہ تو وہ دودھ پیتا ہے اور نہ ہی کچھ کھاتا ہے اور اس کو بیماری گھیر لیتی ہے جیسا ہے بخار ۔ نظربد آجکل بچوں میں بہت زیادہ کثرت سے پائی جاتی ہے کیونکہ بچے بہت ہی پیارے ہوتے ہیں اور کسی کی نظر لگ جائے تو بچے بیمار ہونا شروع ہو جاتے ہیں۔ اور رونا شروع ہو جاتے ہیں بالکل چھوٹے بچے تو اپنی ماں کا تو تک چھوڑ جاتے ہیں ہیں اور ضد کرتے ہیں۔ اور بچہ سوتے ہوئے ڈر جاتا ہے ۔ اور یہ ایسی بیماریاں ہیں جو بچوں کو اندر ہی اندر سے ختم کر دیتی ہیں۔ اور بچے کی نظر بد کا صرف اور صرف روحانی علاج ہے۔
اس عمل کے لیے بہتر ہے کہ گھر کا ایسا فراد ہی عمل کرے جو پانچ وقت کا نمازی ہو۔
سب سے پہلے با وضو ہو کر۔ گیارہ مرتبہ درود شریف پڑھ کر بچے کو پھونک مارے ۔ پھر 41 مرتبہ لا الہ اللہ پڑھ کر بچے کو پھونک مارے ۔ پھر سورہ اخلاص پڑھ کر بچے کو پھونک مارے۔ پھر سورۃ الفلق پڑھ کر بچے کو پھونک مارے۔ پھر سورہ الناس پڑھ کر پھوک مارے ۔ پھر تین مرتبہ آیت الکرسی پڑھ کر پھونک مارے۔ اور آخر میں پھر گیارہ مرتبہ درود شریف پڑھ کر پھونک مارے۔
انشاءاللہ اس دس منٹ کے عمل سے بچے پر نظر بد کے آثار ختم ہو جائیں گے ۔ اور یہ عمل تین روزتک کرنا ہے انشاءاللہ دو تین دن بعد بچے سے مکمل طور پر نظر بد کا اثر ختم ہوجائے گا اور بچہ پہلے کی طرح نارمل ہو جائے گا۔ اگر کوئی بڑا نظر بد کا شکار ہوجائے تو یہی عمل دہرایا ہے تین دن تک انشا اللہ اس بڑے آدمی عورت یا لڑکے کی نظر بد ختم ہوجائےگی ۔
نظربد بہت ہی بری چیز ہے اور اس کا علاج ڈاکٹروں سے ناممکن ہے کیونکہ یہ ایک روحانی بیماری ہے جسے روحانی طریقے سے ہی ختم کیا جا سکتا ہے۔ یاد رہے تم کرنے والا انسان پانچ وقت کا نمازی ہونا لازم ہے۔
ہماری آج کی اس پوسٹ کو نیچے شیئر کے بٹن سے زیادہ سے زیادہ شیئر کریں تاکہ وہ سارے دوستوں کا فائدہ ہوجائے۔ اور ان کے جو بچے نظر بد کا شکار ہے وہ اس عمل سے صحت یاب ہو جائیں ۔ امید ہے آپ کو آج کی یہ پوسٹ بہت ہی اچھی لگی ہوگی۔ اس پوسٹ کے بارے میں اپنی قیمتی رائے کا اظہار نیچے ضرور کریں کریں شکریہ۔
(Visited 19 times, 1 visits today)

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں